How to Increase Milk Production in Dairy Animals

Today we will discuss how to increase milk production and dairy animals. So the objectives of how to increase milk production did animal

  • Select the appropriate fields for dairy animals
  • Select rations for dairy cows are for maximum production
  • Select portions for replacement animals for fast economical roads
  • Select an appropriate feeding method.

Basic Feeding Facts

  • Feed costs are 40 to 50% of total production costs.
  • Feeding has the most influence on the amount of milk a cow produces.
  • The basis for various options is rough edges.

Methods of Feeding Dairy Cows

Traditional

  • Farm feed concentrates individually based on milk production
  • Most forms we drop it is by free choice.
  • Roughages are fed in feed bunks or managers.
  • Modern forms are moving towards free-choice feeding.

Methods of Feeding Dairy Cows

Challenge or Lead Feeding

  • Challenge the cow to reach its maximum potential for milk production.
  • More concentrates in early lactation.
  • Less concentrates in late lactation
  • When production drops decrease concentrate.
  • Challenge feeding requires good record keeping.

Feeding Total Mixed Rations

  • All or almost all ingredients blended together.
  • Total mixed rations are fed by free choice.
  • Common to place cows and feeding groups.
  • Ration contains roughages and concentrates.
  • Many advantages and disadvantages of this method.

Special Equipment For Feeding Total Mixed Rations

Two Items of Special Equipment or Need

  • Mixer-blender unit
  • Weighing device

Feed Analysis

Recommended regardless of feeding system.

Grouping Cows to Feed Total Mixed Rations

  • Success depends on dividing herd in groups

Automatic Concentrate Feeders

  • Magnetic, electronic and transponder

refuges for dedicated roughly 60 to 80% of dry matter and dirty versions shouldn’t be rough it is rough edges used or a salvage and pasture a wide variety of nutrient value and forages the hay feeding value depends on kind of a majority will result in harvesting method has traditionally been handled and filed form requiring a lot of and level cows feed to more high quality and low quality. alfalfa is the best hay for daily cattle use. Green job so some farmers harvest forage by chopping it daily feeding it in bunks reduces feed losses problems include clay to job each day, moisture content varies considerably salad so it is almost ready crop gave me wade into salad salad is a higher moisture content then dried off it is haylage a crop made into solage calm salad, sparkler roughage refuges for dedicato is easily stored and handled loyal members need supplements. other fields Sorum salvage coastal Bermuda grass, silage, small grain storage straw, called store and pasture grains for dairy cows so grains are included in the ration for energy content grains contain about 70 to 80% total digestible nutrients the grants process prior to feeding our most digestible grains for dairy cows that the use of corn most commonly used will really get Russia’s very high level I must have stored it really high moisture content boards. So the excellent for dedicated lower energy but I even coating the call boards eight fibre in bulk to the grain mix, replace no more than one half the corn in Russia. Barley, so is almost the same as corn the places to 50% of grain ration wheat, high energy and production prices are high for weight no more than 50% of grain ration. Examples protein supplements for dairy cows examples are called gluten meal distillers dried grains, beans and soybean meal
flour mill lasered mean cottonseed meal urea other non protein nitrogen are feeding lactating dairy cows. So, total Rashad content from 18 to 19% crude protein during early lactation reduce group routine to 13% later in lactation period routine degradability should be considered when feeling high producing cows byproducts and other processed meats for dedicated examples are on file forming a file for leaf meat beet pulp brewers where citrus pulp cottonseed or some other examples are corn gluten feed, how many feet months produce Wallace’s potatoes were being hogs and some other examples of wheat abroad it middlings add to these are some examples of byproducts and other courses which are an indicator minerals for dedicated so the requirements are calcium, phosphorus, magnesium, potassium, sodium, these are some major minerals and sulphur abdeen iron, copper, cobalt, manganese
and zinc, selenium and molybdenum minor mammals Why don’t we need a dedicated dairy cows need vitamin D supplements measured doses are fought on mistaken over a long period of time maybe toxic. Six grammes of niacin per cow per day has resulted in increased milk production. What needs a dedicated medic is 85 to 87% water, dairy cows require more water than any other form and even when lactating is the air temperature increases, the need for what else will feed we should provide plenty of water is due to this the milk production increases. body condition score so refers to the amount of where the animal is getting scores range from one to five maxes you for maximum efficiency the records must not be too thin or too fat. So that’s all about how to increase milk production and daily levels.

cattle Uterusprolaps

Cattle womb issue(cattle Uterusprolaps) مادہ جانور کی بچہ دانی کے پرابلم

Utrus prolaps مادہ جانور کی بچہ دانی کے پرابلم
بچہ دانی کے مسلے زیادہ طر ان جانوروں میں ہوتے ہیں جن کو کیلشیم اور منرلز اور نمکیات کی کمی ہو ۔جس کی وجہ سے مادہ جانور وقت پر ہیٹ میں نہی اتی ۔بچہ دانی میں انفیکشن ہوجاتا ہے جس سے مادہ کا حمل نہی ٹھرتا ۔اگر ٹھر جاۓ تو 5ماہ کے بعد مادہ پیچھا نکالنا شروع کر دیتی ہے۔یہ سب بچہ دانی کے مسلے ہیں ۔
اکثر مادہ جانور وقت پر ہیٹ میں نہی اتی تو اس صورت میں اسکو دواٸی کے زریعے ہیٹ میں لایا جاتا ہے
مادہ کو ہیٹ میں لانے کیلیے
Delmazine or
lotalize injection
ان کے لگانے سے 36 گھنٹے کے اندر اندر مادہ ہیٹ میں اجاتی ہے ۔اگر یہ نا میں تو پھر
cyclomate injure
ادھا لگاٸیں اور پھر ادھا ایک دن چھوڑ کر لگاٸیں ۔
ہیٹ میں لانے کیلیے دیسی علاج
میتھرے 250 گرام۔گڑ 250 گرام۔اجواٸن 200 گرام۔گندم 250 گرام۔مسور کی دال سو گرام
سب کو مکس کر کے سو گرام روز دیں ۔دس سے پندرہ دن میں مادہ ہیٹ میں اجاۓ گی اگر پھر بھی نا اۓ تو پھر اوپر والے ٹیکے لگاٸیں۔
لگاٸیں ۔
مادہ جانور کی بچہ دانی میں انفیکشن
اسکا اندازہ اپ اسے لگا سکتے ہیں کہ مادہ ہیٹ سے پہے یا بعد میں ہلکا پیلا سا لیس دار مواد پھینکتی ہے اس کی وجہ انفیکشن ہی ہوتا ہے ۔اگر مواد پانی کی طرح کا ہو تو اسکا اتنا مسلہ نہی ہوتا ۔اس infection سے جانور کاحمل نہی ٹھرتا ۔بار بار مادہ ہیٹ میں اتی ہے
علاج
utrus floor tube
مادہ کی بچہ دانی میں رکھیں یہ عمل دو دن یا پھر تین دن کریں ۔
Utrus pasries tab
یا پھر یہ گولیاں بچہ دانی میں رکھیں ۔
یا پھر اچھے ڈاکٹر سے رجوع کر کے دواٸی استعمال کریں ۔اسکے بعد جب مادہ ہیٹ میں اۓ گی توضرور ٹھر جاے گی ۔
مادہ پیچھا نکالتی ہو تو
یہ مسلہ گھبن مادہ میں ہوتا ہے جب 5ماہ حمل کو ہوجاٸیں تو مادہ کی بچہ دانی پر دباٶ پڑتا ہے اور جیسے جیسے بچہ دانی utrus باہر کو اتی ہے مادہ کو مزا اتا ہے اسلیے وہ بیٹھی رہتی ہے ۔اور پیچھا زیادہ باہر نکل اتا ہے۔یہ زیادہ طر ان مادہ میں یہ مسلہ زیادہ ہوتا ہے جن میں کیلشیم اور منرلز کی کمی ہوتی ہے ۔
projesteran inj
Cp kan 5 gram
vitamin E 50+SE
جو بھی مادہ پیچھا نکالتی ہو اسکو قبض نہی ہونی چاہیے ۔اسکو توڑی کا استعمال کم کریں اور سبز چارہ زیادہ دیں ۔اگر قبض ہو تو ادھ کلو گل قند ایک کلو ابلہ ہوا دودھ جب نیم گرم رہ جاۓ تو ان دونوں مکس کر کے پلا دیں ۔
بہتر ہے اس جانور کو رسی کا شکنجہ لگا دیں ۔رسی نیلون کی نا ہو ۔اگر پیچھا زیادہ باہر نکل أۓ تو پہلے اسے پانی سے صاف کریں اور جانور کا اگلا حصہ نیچے اور پیچھلا حصہ اوپر جگہ پر کھڑا کر کے ہاتھ میں شاپر چڑھا کر نکلا ہو پچھا اسطرح دونوں ہاتھ میں پکڑنا ہے جیسے فٹ بال پکڑتے ہیں انگلیاں کا دباٶ نا پڑے بلکہ ہتیھلی سے ہلکا زور لگا کر پیچھا اندر کریں ۔اور بعد میں شکنجہ لگادیں ۔
اپکے جانور اپکا زیور ہیں اسکی حفاظت کریں ۔
خوشحال کسان مظبوط پاکستان

سرسوں کے تیل کا ٹانک

اکثر لوگ جانوروں کا سرسوں کا تیل دیتے ہیں ۔اسپر کوٸی خاص تحقیق کسی کی بھی نہی ہے ۔بس سینہ باسینہ ہی یہ نسخہ چلاارہا ہے ۔جو لوگ بھی تیل جانوروں کو دیتے ہیں اسکا اتنا فاٸدہ نہی ہوتا جتنا وہ تیل پر خرچ کر دیتے ہیں ۔خاص کر بریڈر کو تیل دیتے دیکھا ہے اور اندھے واہ دیتے دیکھا ہے ۔
ہاں اگر کسی چیز میں پکا کر دیں تو اسکا فاٸدہ بڑھ جاتا ہے ۔میں اپکے ساتھ دو نسخے بتاتا ہوں ۔ ان شاء اللہ ۔بہت فاٸدہ ہوگا ۔

Continue Reading

جدید فامر کیلیے اہم ہدایات

جدید فامر کیلیے اہم ہدایات
پچھلے پانچ سال سے بہت سارے لوگ جدید فارمنگ کی طرف اۓ ہیں ۔انمیں سے زیادہ لوگ اورسیسز پاکستانی ہیں ۔انمیں زیادہ طر سعودیہ UAE قطر اور کچھ لوگ یورپ سے سرمایہ کاری کی ہے ۔ہمیں خوشی ہے کہ ہمارے یہ بھاٸی دوبارہ اپنے کھیت کھلیانوں کی طرف واپس اٸیں ہے ۔ہمیں ہر طرح سے انکی حوصلہ افزاٸی کرنی چاہے ۔
جدید فارمر کو چاہے وہ اورسیسز ہوں یا مقیم ہوں ۔فارمنگ میں سرمایہ کاری کرنے میں کچھ چیزوں کا خیال رکھیں ۔پہلے سٹکچر پر پیسہ ضاٸع نا کریں ۔چارے کیلیے زمیں کا بندوبست ہونا چاہیے ۔زیادہ پیسہ جانوروں پر خرچ کریں ۔اپکو منافع جانوروں نے دینا ہے ۔
اب میں اپ سے اپنے دو دوست اور ایک عزیز کا بتاتا ہوں جنہوں نے ایک سال میں فارمنگ میں سرمایہ کاری کی اور یہ تینوں اورسیسز ہیں ۔
ایک دوست انہوں نے 150 جانوروں کا شیڈ پہلےبنا لیا جبکہ ابھی تک ان کے پاس صرف 13جانور دودھ والے ہیں ۔کیونکہ انہوں نے سٹکچر پر بہت پیسہ خرچ کر لیا ہے اب انکو فاٸدہ دیر سے نظر اۓ گا ۔
دوسری غلطی یہ کی کہ نسل کے پیچھے چار چار لاکھ کےجانور لیے جبکہ انکی دودھ کی پیداوار 15 سے 18 لیٹر ہے ۔۔پرفارمس والے جانور لیں پر گھوم پھر کر اگر اپ بڑے فارموں سے لیں گے تو یہ بہت مہنگے دیں گے ۔
ابتدا میں جانور ایمپورٹڈ نا رکھیں ۔
ہمارے دوسرے دوست نے دس لاکھ کی دو گاۓ USA سے منگواٸی ۔جب أٸی تو 50لیٹر دودھ تھا اب 30سے 32 لیٹر ہی رہ گیاہے ۔کیوں دودھ کم کیا یہ ایک لمبی بحث ہے ۔
تیسرے دوست نے ابتدا میں 30 جانوروں کا شیڈ بنایا ۔ 13 تازی سوٸی ہوٸی مادہ لیں اور 12 پانچ ماہ کی گھبن مادہ لیں۔اور دودھ کیلے انکی تیاری کی ۔اب اسوقت ان کے پاس 25 دودھ والے جانور ہیں ۔اور 18 بچے ہیں جن کی عمر چھ سے پندرہ دن کی ہے ۔یہ دوست چھ ماہ میں ہی سٹریس سے نکل گیے ۔جیسے جیسے انکے جانور بڑھتے جاٸیں گے وہ اپنے سٹکچر میں اضافہ کرتے جاٸیں گے ۔
جدید فارمر داناٸی کا کادامن ہاتھ سے نا چھوڑیں ۔سدا بہار چارہ کاشت کریں ۔موسمی چارہ سے جان چھوڑاٸیں ۔توڑی سیزن پر خریدیں ۔ونڈا خود بناٸیں ۔
عام بیماریوں کی دواٸی ہر وقت پاس رکھیں

Continue Reading

جانوروں کے جسم کا درجہ حرارت(بخار)

مختلف جانوروں کا درجہ حرارت مختلف ہوتا ہے ۔اکثر ہمارے کسان بھاٸی جانوروں کےدرجہ حرارت کو انسانوں کےساتھ ملاتے ہیں ایسا نہی ہے ۔اور درجہ حرارت علاقے کے لحاظ سے بھی ایک سے دو پواٸنٹ کا فرق ہوتا ہے ۔
عموما جانوروں کے درجہ حرارت کچھ یوں ہے۔
جانور کا نام درجہ حرارت
C F
بھینس 38.3 101
گاۓ 38.5 101.4
بکری 39.8 103.8
بھیڑ ۔شیپ 39.1 102.4
اونٹ 36.3 97.4
کتا 38.8 102
انسان 36.8 98.4
جب بھی درجہ حرارت چیک کریں تو ڈیجیٹل تھرما میڑ استعمال کریں ۔ان کا رزلٹ اچھا ہے ۔ اور عام ادمی کو پڑھنے میں اسانی ہوتی ۔ کسی بھی جانور پر تھرما میڑ استعمال کرنے کے بعد اسکو اچھی طرح واش کر کے پھر ڈیٹول میں اچھی طرح ڈیپ کر کے صاف اور خشک جگہ پر رکھیں ۔۔۔
کوٸی بھی جانور جو سر جھکاۓ کھڑا ہو ۔سست ہو ۔ایک طرف کھڑا ہو جا ایک طرف بیٹھ جاۓ ۔چارہ کھانا کم کر دے یا چھوڑ دے اسکا بخار یعنی جسم کا درجہ حرارت چیک کریں اگر بخار ہو تو فورا ڈاکٹر سے رجوع کریں اور بخار کا کورس پورا کریں ۔
اوپر چارٹ میں ۔میں نے ہاٸی رینج بتاٸی ہے ۔اگر درجہ حرارت یہاں تک ہو یا اس سے کم تو دواٸی کی ضرورت نہی ۔اگر اس سے ایک پواٸنٹ بھی زیادہ ہو تو ڈاکٹر کی ہدایت کے مطابق دواٸی کااستعمال کریں ۔
بخار میں ایک Low رینج ہوتی ہے اور ایک ہاٸی رینج ۔جیسے انسان کی 98-98.4 رینج ہے اگر اس سے اوپر یو تو بخار تصور کیا جاتا ہے ۔اسی طرح بھینس کی رینج 100-101 ہے ۔
اسی لیے میں نے اپکو ہاٸی رینج بتاٸی ہے ۔تاکہ اپکیلیے اسانی ہو ۔
جانوروں کی حفاظت کریں
یہ کسان کا زیور ہے
خوشحال کسان مظبوط پاکستان

مسٹ فین mist fan

اج کل اکثر لوگ مسٹ فین جانوروں کیلیے لگاتے ہیں تاکہ جانوروں کو گرمی سے بچایا جاسکے ۔تاکہ انکی صحت ٹھیک رہے ۔۔بہت
ہی اچھا کرتے ہیں ۔جو بھی یہ فین اپنے جانوروں کیلیے لگا رہے ہیں ۔یہ فین دو فنگشن پر مشتمل ہوتے ہیں ۔ایک ہوا دیتا ہے اور دوسرا پانی کی مخصوص مقدار فین کے پروں کے سامنے پھینکتا ہے اور پروں کی ہوا اس پانی کو نمی کی صورت میں فضا میں بکھیر دیتا ہے ۔تاکہ فضا میں نمی کا تناسب پورا ہو سکے ۔
اب یہ فین کب استعمال کرنا چاہیے اسکا ہمارے فارمر کو زیادہ معلومات نہی ہیں ۔
فین اس وقت چلا دینا چاہیے جب درجہ حرارت 30 یا اس سے زیادہ ہو جاے ۔اور مسٹ تب چلانا چاہیے جب فضا میں نمی کا تناسب 55 فیصد سے کم ہو ۔ اگر نمی کاتناسب 65 فیصد سے زیادہ ہو جاۓ تو بھی مسٹ بند کر دیں اور فین کو چلتا رہنے دیں ۔
درجہ حرارت اور فضا میں نمی کاتناسب معلوم کرنے کیلیے اپ کے پاس ڈیجیٹل ترما میٹر ہو جس میں درجہ حرارت اور نمی کاتناسب Humidity کی ریڈنگ ارہی ہو ۔اور جن علاقوں میں نمی کی مقدار زیادہ رہتی ہو ان کو صرف فین ہی لگانا چاہیے ۔اگر درجہ حرارت اور نمی کا تناسب یعنی humidity percentage پوری ہے تو ان کو چلانے کی ضرورت نہی ۔اور بجلی کی بچت کریں ۔
فارمنگ میں اپنے اپکو بھی ایجوکیٹ کریں اور اپنے ورکرز کو بھی ۔یہ ان پڑھوں کا کام نہی بلکہ بہت پڑھے لکھے لوگوں کا کام ہے ۔
درجہ حرارت اور نمی کا تناسب ریڈر کی تصویر بھی شیٸر کر رہا ہوں ۔اس سے ملتا جلتا کسی بھی کمپنی کا اپ لے سکتے ہیں ۔اب یہ زیادہ مہنگے نہی ہیں اور سال ہا سال چلتے ہیں
اپنے جانوروں کی حفاظت کریں یہ کسان کا زیور ہے ۔

جانوروں کی انگھوں میں سفیدی انے کا علاج

چھریں کے درخت کا رس دو چمچ ۔دو چمچ شہد ۔چار چمچ عرق گلاب تینوں کو اچھی طرح مکس کرکے صبح شام انکھوں میں ڈالیں ۔
اگر صرف پانی چلتا ہوتو پھر عرق گلاب چار چمچ اور شہد دو چمچ مکس کرکے شام کو انگھوں میں ڈال دیں ۔ ان شاء اللہ فاٸدہ ہوگا

وک یا لوز موشنLoose Motion of cattles

 In Punjab and Sindh, from February to the end of April, our animals often get dumb or loose motions or patches. In which the animal makes dung thin like water and this process is repeated especially in goats. Gets done this green fodder is caused by overeating.
Our farmer brothers spend a lot of money on ski medicine. Let me tell you a very simple and tried and tested version which is free of cost to control lose motion of cattles.
Della grass is common. If you uproot its root from below, a thick lump or thick lump will appear from below. It is to be taken as ten for goats and 25 to 30 for large animals. Bring the animal to a boil. InshaAllah, one can get relief in one or two meals.

 

 

Loose Motions in cattle treatment
Loose Motions in cattle treatment
پنجاب اور سندھ میں فروری سے اپریل کے اخر تک ہمارے جانوروں کو اکثر موک یا لوز موشن یا پیچس لک جاتے ہیں۔جس میں
جانور پانی کی طرح پتلا گوبر کرتا ہے اور یہ عمل بار بار ہوتا ہے خاص کر بکریوں میں ۔اس سے جانور کمزور ہو جاتا ہے ۔
ایسا سبز چارہ زیادہ کھانے سے ہوتا ہے ۔
ہمارے کسان بھاٸی بہت زیادہ پیسے اسکی میڈیکیشن میں لگا دیتے ہیں ۔
میں اپکو ایک نہایت ہی اسان اور ازمودہ مجرب نسخہ بتاتا ہوں جسکی کاسٹ فری ہے ۔
ڈیلہ گھاس عام پایا جاتاہے ۔اگر اپ اسکی جڑ کو نیچے سے اکھاڑیں تو نیچے سے ایک موٹی سی گھٹی یا موٹی سی گانٹھ سی نظر اۓ گی ۔اسکو لینا ہے بکریوں کییلیے دس عدد اور بڑے جانوروں کے لیے 25 سے تیس ۔اسکا چھلکا اتار کر سرداٸی بنا کر جانور کو لا دیں ۔ ان شاء اللہ ایک سے دو خوراک میں ہی ارام اجاتا ہے ۔
اپنے جانوروں کا خیال رکھیں ۔یہ کسان کا زیور ہے
خوشحال کسان مظبوط پاکستان

ہوم /چوپائے جانوروں کی زکوٰۃ

چوپائے جانوروں کی زکوٰة
جانوروں کی تعریف
چوپائے/جانور
اونٹ،گائے، بیل اور بکریاں
جانوروں کی زكات کا حکم
جانوروں پہ زكات واجب ہے کیونکہ رسولؐ اللہ فرماتے ہیں ” ہر وہ آدمی جو اونٹ، گائے اور بکریوں کے ریوڑ کا مالک ہو اور ان کی زكات ادا نہ کرتا ہو تو قیامت کے دن یہ تمام جانور دنیا کے مقابلے میں بہت بڑے اور موٹے تازے ہو کر آئینگے اور اسکو سینگوں کے ساتھ گھسیٹیں گے اور سر سے کھروں کے ساتھ اوندھنا شروع کریں گے یہاں تک ہ آخر تک پہنچ جائیں گے اور پھر واپس لوٹینگے اور یہ عمل جاری رہے گا یہاں تک کہ انسانوں کے درمیان فیصلہ کر دیا جائے گا۔ “[ اس حدیث کو امام مسلم نے روایت کیا ہے]
جانوروں کی زكات واجب ہونیکی شرائط
1۔ پہلی شرط یہ ہے کہ ان پر مالک کی ملکیت میں ہوتے ہوئے سال گزر جائے کیونکہ رسولؐ اللہ فرماتے ہیں ” مال میں اس وقت تک زكات واجب نہیں ہوتی جب تک اس پر سال نہ گذر جائے۔ “[اس حدیث کو امام ابن ماجہ نے روایت کیا ہے]
2۔ دوسری شرط یہ ہے کہ وہ جانور چرنے والے ہوں کیونکہ رسولؐ اللہ فرماتے ہیں کہ ” چرنے والے ہر 40 اونٹوں میں ایک دو سالہ اونٹنی ہے “[ اس حدیث کو امام نسائی نے روایت کیا ہے]
والابل سائمۃ: ان اونٹوں کو کہتے ہیں کہ جن کی غذا زمین پر اگنے والی گھاس ہوتی ہے اور انکا گذارہ چرنے پر ہوتا ہے۔
والکلا المباح: اس گھاس کو کہتے ہیں جو انسان کے اگائے بغیر اللہ کے حکم سے اگ آتا ہے۔ اور وہ اونٹ جن کی غذا کھیتی ہو یعنی انسان کی بھیجی ہوئی گھاس ہو اسکو سائمہ نہیں کہتے اور نہ ہی ان پر زكات ہے۔
3۔ تیسری شرط یہ ہے کہ ان سے دودھ اور نسل کے اعتبار سے فائدہ حاصل کیا جاتا ہو اور کام نہ لیا جاتا ہو۔ کام کرنے والے اونٹ یعنی وہ اونٹ جن کو کھیتی باڑی، زمین کو سیراب کرنے، سامان ایک جگہ سےدوسری جگہ منتقل کرنے اور بوجھ اٹھانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہو، ان پہ زكات نہیں ہے۔
کیونکہ یہ اونٹ کپڑوں کی طرح انسان کی ضروریات اصلیہ میں داخل ہو جاتے ہیں اور وہ اونٹ جو کرایہ پر دیے جاتے ہوں ان پر بھی زكات نہیں ہے۔ البتہ ان سے حاصل ہونے والا کرایہ اگر نصاب کو پہنچ جائے اور اس پر سال بھی گذر جائے تو اس پرزكات ہے۔
4۔ چوتھی شرط یہ ہے کہ جانور نصاب شرعی کو پہنچ جائیں۔
جانوروں کی زكات کا شرعی نصاب
پہلے: اونٹوں کا نصاب اور ہر نصاب کی جو مقدار واجب ہے اسکا بیان۔
حضرت انس بن مالک فرماتے ہیں کہ حضرت ابوبکر صدیق رضي الله عنه نے انکے لیے لکھا ” یہ وہ فرض زكات ہے جو رسولؐ اللہ نے مسلمانوں پر فرض کی ہے اور جس کا اللہ اور اسکے رسولؐ نے حکم دیاہے۔ 24 اونٹ اور اس سے کم میں بکریاں ہیں، ہر پانچ میں ایک بکری ہے، جب انکی تعداد 25 تک پہنچ جائے تو 25 سے 35 تک میں ایک سالہ اونٹنی ہے اور 36 سے 45 تک ایک دو سالہ اونٹنی ہے، 46 سے 60 تک ایک 3 سالہ اونٹنی ہے، 61 سے 75 تک ایک چار سالہ اونٹنی ہے اور جس آدمی کے پاس 4 اونٹ ہوں تو اس پر زكات نہیں ہے۔ ہاں اگر وہ اپنی مرضی سے دینا چاہے تو دے سکتا ہے اور جب اونٹوں کی تعداد پانچ تک پہنچ جائے تو زكات میں ایک بکری واجب ہے “[ اس حدیث کو امام بخاری نے روایت کیا ہے]
اونٹوں کا نصاب اور انکی زكات
اونٹوں کی تعداداور اس میں زكات کی مقدار5: 9تک میں ایک بکری ہے10: 14تک میں دو بکریاں ہیں۔15: 19تک میں تین بکریاں ہیں۔20: 24تک میں چار بکریاں ہیں۔25: 35تک میں ایک سالہ انٹنی ہے۔36: 45تک میں ایک دو سالہ اونٹنی ہے۔46: 60تک میں ایک تین سالہ اونٹنی ہے۔61: 75تک میں ایک چار سالہ اونٹنی ہے۔76: 90تک میں دو دو سالہ اونٹنیاں ہیں۔91: 120تک میں دو تین سالہ اونٹنیاں ہیں۔120:….بعد ہر 40 میں ایک دو سالہ اونٹنی ہے اور ر پچاس میں ایک تین سالہ اونٹنی ہے۔
دوسرا: گائے بیل کا نصاب اور ہر نصاب میں جو حصہ واجب ہے اسکا بیان
حضرت معاذ بن جبل رضي الله عنه سے روایت ہے فرماتے ہیں” کہ رسولؐ اللہ نے مجھے یمن کی طرف بھیجا اور حکم دیا کہ ان سے ہر 30 گائے،بیل کی زكات میں ایک، ایک سالہ گائے یا بیل وصول کروں۔ اور ہر چالیس میں ایک دو سالہ گائے یا بیل وصول کروں “[ یہ حدیث امام ابوداؤد کی روایت ہے]
گائے کا نصاب اور انکی زكات
گائے کی تعداداور اس میں زكات کی مقدار30: 39میں ایک، ایک سالہ گائے واجب ہے۔40: 59میں ایک، دو سالہ گائےیا بیل واجب ہے۔60: 69میں دو ایک سالہ گائے یا بیل واجب ہے۔70: 79میں ایک، ایک سالہ اور ایک دو سالہ گائے یابیل واجب ہے۔
تیسرا: بکر، بھیڑ، دنبے کا نصاب اور ہر نصاب میں زكات واجب ہونے کی مقدار کا بیان
حضرت انس رضي الله عنه کی پیچھے گذری ہوئی حدیث میں آیا ہے ” چرنے والی بکریوں کی تعدادجب چالیس کو پہنچ جائے تو 40 سے 120 تک میں ایک بکری واجب ہے اور 120 سے 200 تک دو بکریاں ہیں اور 201 سے300 میں 3 بکریاں ہیں۔ تین سو سے زیادہ میں ہر 100 پر ایک ایک بکری ہے اور اگر ان چرنے والی بکریوں کی تعداد 40 سے کم ہو تو ان میں کچھ بھی نہیں ہے۔ ہاں اگر وہ اپنی طرف سے دینا چاہے تو دے سکتا ہے “[ اس حدیث کو امام بخاری نے روایت کیا ہے]
بکری، بھیڑ، دنبہ کا نصاب اور انکی زكات۔
بکریوں بھیڑوں کی تعداداور اس میں زكات کی مقدار40: 120میں ایک بکری واجب ہے۔121: 200تک میں دو بکریاں واجب ہیں۔201: 300تک میں تین بکریاں واجب ہیں۔
پھر ہر100 کے اضافے پر ایک بکری واجب ہے۔
واجب زكات کی صفت اور اسکی خصوصیّت
زكات میں دیے جانیوالے جانور میں ضروری ہے کہ وہ درمیانے مال میں سے ہو نہ بہت اچھا ہو نہ ہی بہت کمزور اور بے کار ہو۔ زكات لینے والے اور دینے والے پر جانور کے واجب عمر کا لحاظ رکھنا ضروری ہے کیونکہ جب مقررہ عمر سے چھوٹی عمر والا لیا جائے گا تو اس میں غریبوں اور فقیروں کا نقصان ہے اور زیادہ عمر والا لینے پر مالداروں پر ظلم ہے۔
اور نہ بیمار جانور لیا جائے گا اور نہ ہی عیب دار اور زیادہ عمر والا یعنی بوڑھا لیا جائے گا۔ کیونکہ اس قسم کے جانور فقیروں کو فائدہ نہیں پہنچاتے اور اس کے مقابلے میں بہت زیادہ موٹا تازہ جانور یعنی کھانے کے لیے بالکل تیار جانور ۔
او اسی طرح بچے کی پرورش کرنے والا جانور اور حاملہ جانور اور نہ ہی اموال اور جانوروں میں سب سے بہترین جانور لیے جائینگے کیونکہ اس میں مالدار کا نقصان ہے اور رسولؐ اللہ بھی فرماتے ہیں ” آپ ان کے اموال میں سے بہترین مال سے دور رہو ” [ اس حدیث کو امام بخاری نے روایت کیا ہے]
جانوروں کا آپس میں اختلاط یعنی انکا آپس میں مل جانا۔
اختلاط کی دو قسمیں ہیں۔
پہلی قسم: اعیان کا اختلاط ہے
اور وہ یہ ہے کہ مال ملکیت کے اعتبار سے دو آدمیوں کے درمیان مشترک ہو اور دونوں میں ایک کا حصہ دوسرے سے جُدا نہ ہو اور اعیان میں اختلاط یا تو وراثت کی وجہ سے آتا ہے یا پھر خریداری کی وجہ سے آتا ہے
دوسری قسم: اوصاف کا اختلاط ہے۔
اور وہ یہ ہے کہ ہر ایک کا حصہ دوسرے سے جُدا ہوصرف قُرب و جوار انکو جمع کرتا ہو۔
اور یہ خلطہ دونوں مختلط مالوں کو ایک بنا دیتا ہے جب دونوں کے جمع ہونے سے نصاب پورا ہو جاتا ہو اور یہ کہ دونوں ملنے والے زكات کے وجوب کی اہلیّت بھی رکھتے ہوں۔ اور اگر دونوں میں سے ایک کافر ہو تو پھر خلطہ ٹھیک نہیں ہے اور نہ ہی اسکا کوئی اثر ہے۔
اور یہ کہ دونوں مال چراگاہ، پناہ گاہ، آنے جانے، دودھ دوہنے کے برتن اور جگہ اور نر جانور کے اعتبار سے ایک ہو تو اسکو خلطہ کہیں گے اور اسکی وجہ سے دو مال ایک ہو جاتے ہیں۔ کیونکہ رسولؐ اللہ فرماتے ہیں ” زكات کے خوف سے جُدا مال کو ملانا اور ملے ہوئے مال کو جُدا نہیں کرنا چاہیے ” [ اس حدیث کو ابن خزیمہ نے روایت کیا ہے]